4/02/2013

سکرین لیس ڈے 4


ایسا نہیں ہے کہ تفریح وغیرہ میں سکرین کے استعمال نے اس کو ہمارے اختیار سے باہر کر دیا ہے۔ وقت کو کسی تنظیم کے بغیر خرچ کرنا ایک طرز زندگی ہوا کرتا ہے اور یہ ہمیشہ سے ایسا ہی ہے۔ جب ٹی وی نہیں تھا تو ریڈیو تھا۔ فیس بک نہیں تھی تو لوگ آس پڑوس میں گھنٹوں کےلیے نکل جاتے تھے یا رات رات تک دوستوں، سینما وغیرہ کے چکر ہوتے تھے۔ ٹیلیفون ہوا، موویز ہوئیں۔ یہ سب اپنے اپنے دور میں زندگی کی روٹین میں اثر انداز ہوتے آئے ہیں۔ لیکن ان کونقصاندہ کی بجائے کارآمد ٹولز کی طرح استعمال کرنا ہی ہماری اصل کامیابی ہے۔

سکرین یوزیج پیٹرن جان لینے کے بعد وقت کہاں جا رہا ہے کا صحیح اندازہ ہوسکتا ہے۔ اور اس سلسلہ میں کیا اقدام کیے جاسکتے ہیں اس پر غور ہو سکتاہے۔ آن لائن وقت کے استعمال کے لیے پیج ٹریکر وغیرہ سے بھی مدد لی جا سکتی ہے۔ سب سے پہلا قدم یہ ہے کہ کام، تفریح تعلیم وغیرہ کی کسی بھی ایکٹیوٹی کو مکس اپ نہ کیا جائے۔ ملٹی ٹاسکنگ وقت بچانے کی بجائے وقت کا ضیاع کا باعث بھی ہو سکتی ہے۔

 مزید اگلی پوسٹ میں دیکھیں

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں